I AM LOOKING FOR
put post title here
(9) (180)

Mona, Intended Parent in Islamabad, Pakistan

Name
Mona
Member Type
Intended Parent
Country
Pakistan
Region/State
Islamabad
Date Registered
1 year ago
Profile Updated
1 year ago
Last Login
1 year ago
Messages Sent
0
Messages Received
3

Intended Parent from Islamabad, Pakistan.

My Age

Pakistan
Islamabad

Leave a publicly readable comment:
Please login or sign up to add a comment...

stork service, Surrogacy Agency
Commented on July 8th, 2019 06:17AM [EDT]
we are here to help you - egg/sperm donation/surrogacy
Hi. We are the full service leading Surrogacy and egg donation agency in Tbilisi, Georgia.We provide donor and surrogacy services. Our surrogates can also fly outside Georgia.We have a huge base of surrogate mothers and egg donors and we'll be happy to help you select a surrogate mother and/or egg donor, who will fulfill your requirements.Also, it is possible to book free online consultation with Doctor.We are here to help and support them through all the stages of their surrogacy journey.We sincerely decided to devote our activities to help childless couples find the joy of parenting.This common goal makes the staff of the center a cohesive team.We have worked out the scheme of supporting biological parents, and accompanying surrogate mothers and oocyte donors.The best clinics in reproductive medicine are among our partners.Effective logistics makes it possible to provide our services to clients from all over the world.We have a parents from the countries where surrogacy is not legal, such as Germany, Spain, China.We really are the company who you can trust.If you will be interested in our services, please don’t hesitate to contact me.I will send you all the packages and price lists.I can provide you direct parents from Australia, Spain, Israel, Hungary and Russia.Our company is working with medical tourism since *** and with surrogacy since *** to hear from you soon.
IFS Agency, Surrogacy Agency
Commented on May 14th, 2019 06:11AM [EDT]
Surrogates and Egg Donors
Dear Intended Parents! IFS fertility agency offers future parents surrogacy, egg donation and IVF services in Kazakhstan. The Kazakhstan legal framework for assisted reproduction services is one of the most progressive worldwide.The surrogate has no right to keep the child and only biological parents are listed on the birth certificate as legal parents. Many advanced IVF clinics are located in Kazakhstan.We choose the best clinics with high success rates (more than 70 %). We have our database of healthy, verified surrogates and donors. All surrogates and donors undergo a thorough screening according to a set of special developed procedures.We check physical, emotional health, life history, absence of bad habits and many other factors. We have established a special school to train surrogates before all phases of surrogacy process, including IVF, pregnancy and childbirth.We also have a special department of doulas and a certified psychologist who assist surrogates throughout the program. Our programs include a full range of services, ranging from meeting at Almaty airport, selection of a surrogate, a donor and an IVF clinic to the birth of the baby and paperwork. Our prices are highly competitive.They are lower compared to similar programs in Ukraine, Georgia, the Czech Republic, and considerably lower than in the US, Canada and other countries. Contact us in the manner most convenient to you and we will send you a detailed guide for international intended parents with programs and pricing. Our contacts: Tel./ WhatsApp / Viber / Wichat / Telegram: +7 *** *** 46 22
Zach, Surrogate Mother
Commented on September 18th, 2018 06:19PM [EDT]
Salaam
دلچسپ اور سبق آموز واقعہ Sifar teen ek teen ek paanch, ek saat, sifar, saat, aath. خلیفہ ہارون الرشید عباسی خاندان کا پانچواں خلیفہ تھا‘ عباسیوں نے طویل عرصے تک اسلامی دنیا پر حکومت کی لیکن ان میں سے شہرت صرف ہارون الرشید کو نصیب ہوئی۔ ہارون الرشید کے دور میں ایک بار بہت بڑا قحط پڑ گیا۔ اس قحط کے اثرات سمرقند سے لے کر بغداد تک اور کوفہ سے لے کر مراکش تک ظاہر ہونے لگے۔ ہارون الرشید نے اس قحط سے نمٹنے کیلئے تمام تدبیریں آزما لیں‘اس نے غلے کے گودام کھول دئیے‘ ٹیکس معاف کر دئیے‘ پوری سلطنت میں سرکاری لنگر خانے قائم کر دئیے اور تمام امراءاور تاجروں کو متاثرین کی مدد کیلئے موبلائز کر دیا لیکن اس کے باوجود عوام کے حالات ٹھیک نہ ہوئے۔ ایک رات ہارون الرشید شدید ٹینشن میں تھا‘ اسے نیند نہیں آ رہی تھی‘ ٹینشن کے اس عالم میں اس نے اپنے وزیراعظم یحییٰ بن خالد کو طلب کیا‘ یحییٰ بن خالد ہارون الرشید کااستاد بھی تھا۔اس نے بچپن سے بادشاہ کی تربیت کی تھی۔ ہارون الرشید نے یحییٰ خالد سے کہا ”استادمحترم آپ مجھے کوئی ایسی کہانی‘ کوئی ایسی داستان سنائیں جسے سن کر مجھے قرار آ جائے“ یحییٰ بن خالدمسکرایا اور عرض کیا ”بادشاہ سلامت میں نے اللہ کے کسی نبی کی حیات طیبہ میں ایک داستان پڑھی تھی داستان مقدر‘ قسمت اور اللہ کی رضا کی سب سے بڑی اور شاندار تشریح ہے۔ آپ اگر ۔۔اجازت دیں تو میں وہ داستان آپ کے سامنے دہرا دوں“بادشاہ نے بے چینی سے فرمایا”یا استاد فوراً فرمائیے۔ میری جان حلق میں اٹک رہی ہے“ یحییٰ خالد نے عرض کیا ” کسی جنگل میں ایک بندریا سفر کیلئے روانہ ہونے لگی‘ اس کا ایک بچہ تھا‘ وہ بچے کو ساتھ نہیں لے جا سکتی تھی چنانچہ وہ شیر کے پاس گئی اور اس سے عرض کیا ”جناب آپ جنگل کے بادشاہ ہیں‘ میں سفر پر روانہ ہونے لگی ہوں‘ میری خواہش ہے آپ میرے بچے کی حفاظت اپنے ذمے لے لیں“ شیر نے حامی بھر لی‘ بندریا نے اپنا بچہ شیر کے حوالے کر دیا‘ شیر نے بچہ اپنے کندھے پر بٹھا لیا‘ بندریا سفر پر روانہ ہوگئی‘ اب شیر روزانہ بندر کے بچے کو کندھے پر بٹھاتا اور جنگل میں اپنے روزمرہ کے کام کرتا رہتا۔ ایک دن وہ جنگل میں گھوم رہا تھا کہ اچانک آسمان سے ایک چیل نے ڈائی لگائی‘ شیر کے قریب پہنچی‘ بندریا کا بچہ اٹھایا اور آسمان میں گم ہو گئی‘ شیر جنگل میں بھاگا دوڑا لیکن وہ چیل کو نہ پکڑ سکا“یحییٰ خالد رکا‘ اس نے سانس لیا اور خلیفہ ہارون الرشید سے عرض کیا ”بادشاہ سلامت چند دن بعد بندریا واپس آئی اور شیر سے اپنے بچے کا مطالبہ کر دیا۔ شیر نے شرمندگی سے جواب دیا‘تمہارا بچہ تو چیل لے گئی ہے‘ بندریا کو غصہ آگیا اور اس نے چلا کر کہا ”تم کیسے بادشاہ ہو‘ تم ایک امانت کی حفاظت نہیں کر سکے‘ تم اس سارے جنگل کا نظام کیسے چلاﺅ گے“شیر نے افسوس سے سر ہلایا اور بولا ”میں زمین کا بادشاہ ہوں‘ اگر زمین سے کوئی آفت تمہارے بچے کی طرف بڑھتی تو میں اسے روک لیتا لیکن یہ آفت آسمان سے اتری تھی اور آسمان کی آفتیں صرف اور صرف آسمان والا روک سکتا ہے“۔یہ کہانی سنانے کے بعد یحییٰ بن خالد نے ہارون الرشید سے عرض کیا ”بادشاہ سلامت قحط کی یہ آفت بھی اگر زمین سے نکلی ہوتی تو آپ اسے روک لیتے‘ یہ آسمان کا عذاب ہے‘ اسے صرف اللہ تعالیٰ روک سکتا ہے چنانچہ آپ اسے رکوانے کیلئے بادشاہ نہ بنیں‘ فقیر بنیں‘ یہ آفت رک جائے گی“۔دنیا میں آفتیں دو قسم کی ہوتی ہیں‘ آسمانی مصیبتیں اور زمینی آفتیں۔ آسمانی آفت سے بچے کیلئے اللہ تعالیٰ کا راضی ہونا ضروری ہوتا ہے جبکہ زمینی آفت سے بچاﺅ کیلئے انسانوں کامتحد ہونا‘ وسائل کا بھر پور استعمال اور حکمرانوں کا اخلاص درکار ہوتا ہے۔ یحییٰ بن خالد نے ہارون الرشید کو کہا تھا ”بادشاہ سلامت آسمانی آفتیں اس وقت تک ختم نہیں ہوتیں جب تک انسان اپنے رب کو راضی نہیں کر لیتا‘ آپ اس آفت کامقابلہ بادشاہ بن کر نہیں کر سکیں گے چنانچہ آپ فقیر بن جائیے۔ اللہ کے حضور گر جائیے‘ اس سے توبہ کیجئے‘ اس سے مدد مانگیے“۔ دنیا کے تمام مسائل اوران کے حل کے درمیان صرف اتنا فاصلہ ہوتا ہے جتنا ماتھے اور جائے نماز میں ہوتا ہے لیکن افسوس ہم اپنے مسائل کے حل کیلئے سات سمندر پار تو جا سکتے ہیں لیکن ماتھے اور جائے نماز کے درمیان موجود چند انچ کا فاصلہ طے نہیں کر سکتے.مکرم قارئین کرام چلتے، چلتے ایک آخری بات عرض کرتا چلوں کے اگر کبھی کوئی ویڈیو، قول، واقعہ، کہانی یا تحریر وغیرہ اچھی لگا کرئے تو مطالعہ کے بعد مزید تھوڑی سی زحمت فرما کر اپنے دوستوں سے بھی شئیر کر لیا کیجئے، یقین کیجئے کہ اس میں آپ کا بمشکل ایک لمحہ صرف ہو گا لیکن ہو سکتا ہے کہ، اس ایک لمحہ کی اٹھائی ہوئی تکلیف سے آپ کی شیئر کردا تحریر ہزاروں لوگوں کے لیے سبق آموز ثابت ہو ....!
Muhammad Rehan, Sperm Donor
Commented on July 28th, 2018 06:56PM [EDT]
Contact me for your problem
I am willing to help you, I am in good health
WARNING: FindSurrogateMother.com is a unique platform that does not interfere with the connections being made in its community. The connections are non-intrusive and made organically between members. While you are in control of your FindSurrogateMother.com experience, your safety is still very important to us. There are certain safety steps that you should always consider: 1) Protect Your Finances & Never Send Money or Financial Information 2) Protect Your Personal Information and 3) Report Suspicious Members and All Suspicious Behavior. You are always the best judge of your own safety, these guidelines are not intended to be a substitute for your own judgment.